59

میں صرف بیرسٹر جاوید کے خلاف ہوں، ن لیگ کے چھوٹے موٹے اختلافات دور ہونے چاہئیں: کیپٹن (ر) صفدر

ایبٹ آباد: مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنما کیپٹن (ر) محمد صفدر نے کہا ہے کہ ہزارہ میں ان کا اختلاف صرف بیرسٹر جاوید سے ہے جن کے خلاف آزاد حیثیت سے بھی الیکشن لڑنا پڑا تو لڑیں گے ۔ وہ ایبٹ آباد پریس کلب میں میڈیا سے گفتگو کررہے تھے ۔ کیپٹن (ر) صفدر نے کہا کہ انہوں نے عنایت اللہ خان، اورنگزیب نلوٹھہ اور محبت اعوان سے درخواست کی ہے کہ وہ ایبٹ آباد میں چھوٹے موٹے اختلافات ختم کریں ۔ ان کا کہنا تھا کہ کینٹ بورڈ انتخابات میں لوگوں نے پارٹی گروپوں کو نہیں بلکہ نواز شریف کو ووٹ دیا ۔ کیپٹن (ر) صفدر نے اس امر کی نشان دہی کرتے ہوئے کہا کہ ہزارہ نواز شریف سے رشتہ داری بھی نبھاتا ہے اور ان سے عقیدت کا اظہار بھی کرتا ہے جس کا ثبوت عوام نے کینٹ بورڈ انتخابات میں دیا ۔ سابق رکن قومی اسمبلی نے ایک جج سے متعلق انکشاف کیا کہ اس نے صرف 42 ہزار روپے کی خاطر مانسہرہ میں قادیانیوں کا کیس لڑا جو دنیا و آخرت میں رسوا ہوگا ۔ انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ ن کے دور حکومت میں ایبٹ آباد میں سپلائی کے مقام پر انٹرچینج کی منظوری دی گئی تھی جس پر تحریک انصاف کی حکومت نے عمل در آمد نہیں کیا تاہم مسلم لیگ ن جب بھی برسر اقتدار آئی، اس منصوبے کو عملی جامہ پہنائے گی ۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہاکہ ایرا سے پوچھا جائے بکریال سٹی کے لیے آنے والا فنڈ کہاں گیا ۔ سابق ایم این اے نے اعظم سواتی کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ انہوں نے اپنے بھائی کو 21 کروڑ روپے دلوائے جس کی نیب انکوائری نہیں کررہا ۔ انہوں نے کہا کہ اعظم سواتی فراڈ کی وجہ سے آج امریکا بھی نہیں جاسکتے۔ کیپٹن (ر) صفدر نے صحافی برداری کو یقین دلایا کہ میڈیا کی آزادی کی جنگ میں وہ ان کے شانہ بشانہ رہیں گے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں