78

لاک ڈاؤن میں نرمی: ایبٹ آباد کے بازاروں میں شہریوں کا رش

تمام دکانیں کھل گئیں، احتیاطی تدابیر نظر انداز، سماجی فاصلے کی دھجیاں بکھیر دی گئیں

حکومت کی جانب سے لاک ڈاؤن میں نرمی کے بعد ایبٹ آباد شہر میں کاروباری سرگرمیاں تیز ہوگئی ہیں ۔ مین بازار میں اس وقت تمام دکانیں کھلی ہیں جن میں لوگوں کا بے پناہ رش ہے ۔اس ضمن میں نہ تو ماسک پہنے جارہے ہیں اور نہ ہی دیگر احتیاطی تدابیر کو اہمیت دی جارہی ہے ۔ یاد رہے کہ ایبٹ آباد میں کورونا وائرس کے تصدیق شدہ مریضوں کی تعداد 89 ہوچکی ہے جبکہ 6 اموات بھی واقع ہوئی ہیں ۔ علاوہ ازیں 935 کے قریب مشتبہ مریض سامنے آئے ہیں ۔ متعلقہ حکام کے مطابق شہر میں وبا سے متاثرہ افراد کی تعداد مسلسل بڑھ رہی ہے تاہم دوسری جانب اس کی روک تھام کے لیے اقدامات نہ ہونے کے برابر ہیں ۔ ایک سروے میں شہر کے سنجیدہ حلقوں نے کہا کہ لاک ڈاؤن سے متاثرہ تاجروں کی حوصلہ افزائی کے لیے حکومتی اقدامات اگرچہ خوش آئند ہیں مگر بازاروں میں سماجی فاصلہ قائم نہ رکھنے سے مسئلہ گھمبیر صورت اختیار کرسکتا ہے. ان کا کہنا تھا کہ یہ درست ہے لاک ڈاؤن سے کاروباری طبقہ شدید حد تک متاثر ہوا یے جسے ریلیف کی فراہمی کے لیے حکمت عملی ضروری ہے تاہم یہ بھی ایک حقیقت ہے کہ ضلع میں کورونا وائرس پر ابھی خاطر خواہ حد تک قابو نہیں پایا گیا ۔ بازاروں میں اگر احتیاطی تدابیر اختیار نہ کی گئیں تو مرض کے سدباب کے لیے ہونے والی کوششیں رائیگاں جائیں گی1 ۔ انہوں نے حکومت سے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات کا مطالبہ کیا ہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں