200

حفاظتی تدابیر کے ساتھ ہوٹل کھولنے کی اجازت دی جائے: مالکان کا مشترکہ مطالبہ

ہوٹل اینڈ ریسٹورنٹ مالکان نے کورونا حفاظتی تدابیر کے ساتھ ہوٹل فوری کھولنے کا مطالبہ کیا ہے ،چار ماہ سے مکمل لاک ڈاؤن میں رہنے سے معاشی بدحالی سے دوچار ہیں،حکومت یوٹیلیٹی بلز میں رعایت کے علاوہ کورونا فنڈ سے مالی معاونت کرے ،ایبٹ آباد پریس کلب میں ضلع کے مختلف سیاحتی مقامات نتھیاگلی ،ٹھنڈیانی ،ایبٹ آباد سمیت دیگر مقامات کے ہوٹل اور ریسٹورنٹ کے مالکان نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ حکومت احتجاج پر مجبور کر رہی ہے ،ملک میں دیگر شعبوں کو حفاظتی تدابیر کے ساتھ کھول چکی ہے لیکن ہوٹلز اور ریسٹورنٹ تاحال بند ہیں جس سے وابستہ افراد بے روزگار ہو چکے ہیں انہوں نے کہاکہ حکومت نے یوٹیلٹی بلز میں ریلیف کا اعلان کیا لیکن اس کے باوجود ماہانہ لاکھوں کے بل بھجوائے جارہے ہیں اور نہ جمع کرنے کی صورت میں کنکشن منقطع کرنے کے نوٹس مل رہے ہیں،جب کہ مسلسل بندش سے مالکان کے ماہانہ کرایوں کی ادائیگی بھی مشکل ہو چکی ہے اور مالکان کا دباؤ بھی ہے جب کہ اس حوالے سے ضلعی انتظامیہ کے نوٹس میں لائے جانے کے باوجود کوئی اقدامات نہیں اٹھائے گئے ہیں ،ریسٹورنٹ مالکان کا کہنا تھا سرکل گلیات میں ہوٹل مالکان صرف سیاحتی سیزن میں سال بھر کے اخراجات پورے کرتے ہیں موجودہ صورتحال میں سیاحتی سیزن بھی گزر رہا ہے ،وزیر اعظم بھی سیاحت کے حوالے سے اقدامات اٹھا رہے ہیں خدارا وہ اس بدحال شعبہ پر بھی توجہ دیں تاکہ معاشی گرداب سے نکل سکیں ،انہوں نے اس بات پر زور دیا ہے کہ وہ حکومت سے مکمل تعاون کرینگے ،اگر روش برقرار رہی تو احتجاج کرینگے جس کی زمہ داری حکومت پر ہوگی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں