183

ایبٹ آباد پریس کلب میں قومی وطن پارٹی کے مرکزی صدر سکندر حیات خان شیرپاو کی میڈیا سے بات چیت

پی ڈی ایم اب بھی فعال تحریک چلا سکتی ہے، سکندر شیرپاو۔٢٩مئ کے سربرائ اجلاس میں نئ تحریک کا لائحہ عمل طے کیا جائیگا۔ہماری کوشش ہے پی ڈی ایم متحد رہے۔سینٹ میں لیڈر آف اپوزیشن کے معاملے پر پیپلز پارٹی کا کردار سب کے سامنے ہے۔پیپلز پارٹی اپنی وضاحت دیگی تو بات آگےبڑھے گی۔انضمام شدہ اضلاع کیلیئے اے ڈی آر کا جو بل لائے ہیں اسکی مزمت کرتے ہیں۔ہم اداروں کی عزت کرتے ہیں مگر آئینی حدود میں رہنے کی بات کرتے ہیں۔ہائبرڈ جمہوریت یا مارشل لاء مسائل کا حل کسی صورت نہیں۔بجٹ کے بعد ہماری پارٹی مہنگائ کیخلاف احتجاج شروع کریگی، سکندر شیرپاو۔صوبے کو اسلام آباد سے بیٹھ کر ریمورٹ کنٹرول سے چلایا جا رہا ہے۔خیبر پختونخواہ میں حکومت نام کی کوئ چیز نہیں۔مرکز کے زمہ خیبر پختونخواہ کے بقایا جات پر آواز نہیں اٹھائ جارہی۔ہزارہ ڈویژن کو مسلسل نظرانداز کیا جارہا ہے۔وزیر اعلی کے پی چھاپے مار کر سمجھ رہے ہیں حکومت چل رہی ہے۔حکومت چھاپوں سے نہیں پالیسیز سے چلتی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں