129

سینیٹ انتخابات کون فاتح ہو گا

اگر یوسف رضا گیلانی جیت جاتے ہیں تو لامھالہ یہ سمجھا جائے گا کہ حکومت اپنی عددی اکثریت کھو چکی، وزیراعظم خود اعتماد کا ووٹ لیں گے یا پی ڈی ایم اپنے طے شدہ منصوبے کے تحت تحریک عدم اعتماد پیش کرے گی۔ علاوہ ازیں وہ چیئرمین سینیٹ کے لئے بھی اپوزیشن کے مشترکہ امیدوار ہوں گے اور اگر حفیظ شیخ جیت جاتے ہیں تو اپوزیشن اپنے پلان کے مطابق اس مہینے لانگ مارچ کرے گی اور اسلام آباد میں دھرنا دے گی۔

صوبائی سطح پر سندھ، بلوچستان اور خیبر پختونخوا میں حکومت کیلئے مشکلات نظر آ رہی ہیں۔ بلوچستان میں12 نشستوں پر حکمران جماعت اور اپوزیشن کے درمیان سخت مقابلہ ہو گا جس کے نتائج حیران کن ہوں گے۔ یہاں پر حکمران جماعتوں بلوچستان عوامی پارٹی اور تحریک انصاف میں امیدواروں کو ٹکٹ دینے کے معاملہ پر شدید تحفظات و اختلافات ہیں، بلوچستان کی بعض سیاسی قد آور شخصیات میں اتحاد و اختلاف نے معاملے کو اور زیادہ گھمبیر بنا دیا ہے جس کا نقصان حکومتی اراکین کو ہو سکتا ہے۔

سندھ میں پیپلز پارٹی کی واضح اکثریت اپنی جگہ ہے لیکن ٹکٹوں کی تقسیم پر سندھ میں تحریک انصاف میں شدید اختلافات موجود ہیں اور اس وجہ سے یہاں پر تحریک انصاف واضح طور پر دو دھڑوں میں تقسیم ہے۔ اس کے علاوہ جی ڈی اے میں شامل جماعتوں میں بھی وہ ایکا نظر نہیں آتا جو گزشتہ عام انتخابات میں دیکھا گیا تھا۔ایم کیو ایم بھی کشمکش کا شکار ہے۔

اس طرح صوبہ کے پی میں صورتحال اور بھی زیادہ تبدیل اس وقت ہوئی جب اپوزیشن کی تمام جماعتوں بشمول جماعت اسلامی کے مشترکہ امیدواران سامنے لانے اور ایک دوسرے کی حمایت کا فیصلہ کیاگیا۔ یہاں بھی تحریک انصاف کے اندر تحفظات ہیں۔ وزیر اعظم عمران خان نے اگرچہ وزیر اعلیٰ محمود خان اور عاطف خان کے درمیان صلح تو کرا دی ہےلیکن ٹکٹوں کی تقسیم پر پی ٹی آئی کے درمیان اختلافات موجود ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں